***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > نماز کا بیان > متفرق مسائل

Share |
سرخی : f 889    مقتدی تشہدمکمل کرنے سے پہلے امام کھڑاہوجائے تو کیا حکم ہے ؟
مقام : عمان,
نام : محمد سالم
سوال:    

میں نماز ظہرکے پہلے قعدہ میں جماعت میں شریک تھا،تشہدمکمل نہ پڑھنے پایاکہ امام صاحب تیسری رکعت کے لئے کھڑے ہوگئے ،میں امام صاحب کے ساتھ کھڑاہوگیااورتشہدادھورارہ گیا،میں یہ جانناچاہتاہوں کہ میری یہ نماز صحیح ہوئی یا نہیں ؟جواب عطافرمائیں ۔شکریہ خداحافظ


............................................................................
جواب:    

جب کوئی شخص پہلے قعدہ میں تشہدکے وقت جماعت میں شامل ہو، تشہد مکمل نہ کرے اورامام صاحب تیسری رکعت کے لئے کھڑے ہوچکے ہوں یا نماز کا آخری قعدہ تھا، اورامام صاحب نے سلام پھیردیا تومناسب وبہتریہ ہے کہ تشہدمکمل کرلے ،اگرمکمل نہ کرے ویسے ہی تیسری رکعت کے لئے قیام کرلے یاقعدہ اخیرہ کی صورت میں سلام پھیردے تب بھی نماز درست ہوگی ۔ آپ پہلے قعدہ میں شریک ہوکر تشہدپڑھ رہے تھے اور تشہدمکمل کئے بغیر امام صاحب کی اتباع وپیروی میں کھڑے ہوگئے، لہذا آپ کی نماز درست ہوگئی تاہم بہتریہ تھا کہ آپ تشہدمکمل کرکے قیام کرتے۔ فتاوی عالمگیری میں ہے : إذَا أَدْرَکَ الْإِمَامَ فِی التَّشَہُّدِ وَقَامَ الْإِمَامُ قَبْلَ أَنْ یُتِمَّ الْمُقْتَدِی أَوْ سَلَّمَ الْإِمَامُ فِی آخِرِ الصَّلَاۃِ قَبْلَ أَنْ یُتِمَّ الْمُقْتَدِی التَّشَہُّدَ فَالْمُخْتَارُ أَنْ یُتِمَّ التَّشَہُّدکَذَا فِی الْغِیَاثِیَّۃِ وَإِنْ لَمْ یُتِمَّ أَجْزَأَہُ۔(فتاوی عالمگیری ،کتاب الصلوۃ ، الفصل السادس فیما یتابع الإمام وفیما لا یتابعہ)۔ واللہ اعلم بالصواب ۔ سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com