***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > نماز کا بیان > اقامت کے مسائل

Share |
سرخی : f 1165    اقامت کس مقام پر کہی جائے؟
مقام : انڈیا,
نام : سید عدنان قادری
سوال:    

کیا ایک مؤذن یا کوئی اور‘ اقامت دیتے ہوئے کہیں بھی کھڑا ہوسکتا ہے یا پھر اسے امام کے پیچھے کھڑا ہونا ہوگا؟ بعض مساجد میں یہ دیکھنے میں آیا ہے کہ مؤذن اسی مائک میں اقامت دیتا ہے جس میں اذان دی گئی تھی کیونکہ مؤذن کے لئے علیحدہ مائک نہیں ہے اور یہ جگہ عام طور پر امام سے آگے ہوتی ہے اور بعد اقامت دینے کے وہ واپس آکر امام کے پیچھے کھڑا ہوجاتا ہے‘ کیا یہ جائز ہے؟


............................................................................
جواب:    

اقامت چونکہ مسجد میں موجود حضرات کو جماعت کی اطلاع کے لئے کہی جاتی ہے اس لئے مسجد کے اندر اقامت کہنا مستحب ہے جبکہ اذان‘ عمومی طور پر تمام حاضر وغائب حضرات کو اطلاع دینے کی غرض سے کہی جاتی ہے لہٰذا اذان باہر کہنا مستحب ہے‘ اقامت مسجد کے اندر کسی بھی مقام پر کہی جاسکتی ہے‘ جس مقام پر اذان کہی گئی ہو اس سے ہٹ کر دوسری جگہ اقامت کہنا بہتر ہے، نیز امام کے محاذات میں پیچھے کی جانب کہی جائے کیونکہ حضرت بلال رضی اللہ عنہ حضرت نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے مصلی اقدس کے پیچھے‘ صف میں کھڑے ہوکر اقامت کہا کرتے تھے‘ تاہم کسی وجہ سے اگر امام کے آگے والے مائک میں اقامت کہہ لے تو اقامت صحیح ہوجائے گی لیکن یہ بہتر نہیں ہے‘ اس کے معاً بعد مؤذن‘ امام کے پیچھے والی صف میں آجائے۔ ردالمحتار‘ ج1‘ کتاب الصلوٰۃ‘ باب الاذان 287میں ہے: ویستحب التحول للاقامۃ الی غیر موضع الاذان وہو متفق علیہ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com