Advanced Search
English
हिंदी
 
 
     
خبریں
Share |
 
حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ علوم ومعارف کا سرچشمہ
 

حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ علوم ومعارف کا سرچشمہ۔

آپ سے علم ومعرفت کا اکتساب کرنے والوں میں امام اعظم،حضرت سفیان ثوری رحمہم اللہ،شامل

مسجد ابو الحسنات میں حضرت ضیاء ملت کا خطاب

     ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر کے زیر اہتمام‘مسجد ابو الحسنات،جہاں نما،حیدرآباد میں ،16/اپریل،2017،بروز اتوار بعد نماز مغرب،ہفتہ واری توسیعی لکچر میں ضیاء ملت حضرت علامہ مولانا مفتی حافظ سید ضیاء الدین نقشبندی مجددی قادری دامت برکاتہم العالیہ شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ نے فرمایا کہ حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ ائمہ اہل بیت سے ہیں،آپ علوم ومعارف کا سرچشمہ اور مرجع خاص وعام تھے،گھرانہ کی خصوصیات کے حامل ہونے کے ساتھ فضل وکمال کے اس بلند مقام پر متمکن تھے کہ جس کا ادراک نہیں کیا جاسکتا۔آپ کی غبارِ راہ کو اکابر نے سرمۂ عقیدت جانا ہے۔

آپ کا پدری سلسلۂ نسب ‘حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ،حضرت امام زین العابدین رضی اللہ عنہ،حضرت امام حسین رضي اللہ عنہ سے حضرت مولائے کائنات علی مرتضی رضی اللہ عنہ تک پہنچتا ہے،اور والدۂ ماجدہ کی جانب سے سلسلہ حضرت ابو بکر صدیق ؓتک پہنچتا ہے،آپ کی والدۂ محترمہ حضرت ام فروہ فاطمہ رضی اللہ عنہا،حضرت قاسم بن محمد بن ابو بکر رضی اللہ عنہ کی شہزادی ہیں۔

حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ یکتائے زمانہ تھے،آپ کے معاصرعلماء ،محدثین اور اکابر امت نے آپ سے اکتساب علم ومعرفت کیا۔

امام المذہب حضرت امام اعظم ابو حنیفہ رحمۃ اللہ علیہ نے آپ کے دستِ حق پرست پر بیعت کی،اور آپ کی معیت کے زمانہ کو سرمایۂ حیات قرار دیا،حضرت امام اعظمؒ کا مشہور زمانہ قول ہے:’’لولا السنتان لھلک النعمان‘‘۔اگر حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ سے بیعت وصحبت کے دو سال نہ ہوتے تو ابو حنیفہ نعمان ‘ہلاک ہوجاتا۔

حضرت امام مالک رحمۃ اللہ علیہ،حضرت سفیان ثوری رحمۃ اللہ علیہ اور حضرت سفیان بن عیینہ رحمۃ اللہ علیہ جیسے اساطین علم وفن نے آپ سے شرفِ تلمذ حاصل کیا۔ حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ کے تلامذہ کی مرویات سے صحاح ستہ ودیگر کتب حدیث مالامال ہیں۔

ایک مرتبہ حضرت سفیان ثوری رحمۃ اللہ علیہ نے حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ سے نصیحت کی درخواست کی،اور عرض کیا کہ میں اس وقت تک نہیں اٹھوں گا جب تک کہ آپ مجھے نصیحت نہ فرمائیں!آپ نے فرمایا:میں تمہیں تین باتوں کی نصیحت کرتاہوں:(1)نعمت ملنے کے بعد اس کو قائم رکھنے کے لئے شکر کیا کرو!(2)رزق میں تاخیر ہو(کاروبار میں رکاوٹ ہو) توکثرت سے استغفار کیاکرو!(3)اورحکومت یا کسی اور طاقت کی جانب سے فکر وخوف کا معاملہ ہوتو ’’لاحول ولاقوۃ الا باللہ العلی العظیم‘‘پڑھتے رہو۔یہ کشادگی و وسعت کی کنجی اور جنت کے خزانوں میں سے ایک خزانہ ہے۔

حضرت سفیان ثوری رحمۃ اللہ علیہ نے کہا:کیا شان والی تین نصیحتیں ہیں!فرمایا:اے ابو عبداللہ ،سفیان!آپ سمجھ گئے تو اللہ تعالی ضرور آپ کو ان کے ذریعہ فائدہ پہنچائے گا۔

حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ علم تفسیر میں بھی اعلی مقام رکھتے تھے۔حق گوئی وحق بیانی میں آپ اپنی مثال تھے،علمی رعب وجلالت کا یہ حال تھا کہ ایک مرتبہ خلیفہ منصور کو مکھی تنگ کررہی تھی،اس نے جھنجھلاکر کہا:خدا نے مکھی کو کیوں پیدا کیا؟آپ نے فرمایا:تکبر کرنے والوں کے تکبر کو توڑنے کے لئے مکھی کو پیدا کیا۔آپ صاحبِ کرامات کثیرہ بزرگ تھے،آپ کہیں تشریف لے جارہے تھے ، راستہ میں ملاحظہ فرمایاکہ ایک خاتون اور اس کے بچے رورہے ہیں،آپ نے رونے کا سبب دریافت کیا تو جواب آیا ہے کہ ہماری گائے مرگئی ہے،اس کے دودھ پر ہی ہماری گزر بسر تھی،آپ نے فرمایا:کیا تم چاہتے ہو کہ یہ دوبارہ زندہ ہوجائے؟انہوں نے کہا:یہ کیسے ممکن ہے؟آپ نے دعاء فرمائی،اس مردہ گائے پر ہاتھ پھیرا تو وہ فوراً زندہ ہوگئی۔

مولاناحافظ سید محمدمصباح الدین عمیر نقشبندی صاحب(فاضل)جامعہ نظامیہ نے کہا کہ علم وفضل کے ساتھ نسب مبارک کی خصوصیات سے بھی متصف تھے،آپ کا نام مبارک بھی شفاء کا ذریعہ ہے۔

اور مولانا حافظ سید بہاء الدین زبیر نقشبندی صاحب(فاضل)جامعہ نظامیہ نے کہا کہ حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ کے وجود مبارک کی برکتوں کا اس سے بخوبی اندازہ ہوتا ہے کہ ایک مرتبہ سفر حج کے دوران آپ کسی سوکھے درخت کے نیچے تشریف فرماہوکر کچھ پڑھا تو فورا درخت ہرابھرا ہوگیا اور اس درخت سے ایسے شیریں کھجور آئے جو سابق میں کبھی نہ آئے تھے۔

 سلام ودعاء پر محفل کا اختتام عمل میں آیا۔

 
 
  NS1: 1281   
حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ علوم ومعارف کا سرچشمہ

  NS1: 1279   
حضرت مولائے کائنات رضی اللہ عنہ آفتاب ولایت ومرکز فیض۔قرآن کریم میں آپ کی عظمت کا بیان

  NS1: 1278   
حضرت غریب نواز رحمۃ اللہ علیہ نے ظلمتوں کو کافور کرکے ارض ہند کو بقعہ نور بنادیا

  NS1: 1276   
حضرت صدیق اکبر عقیدۂ ختم نبوت کے اولین محافظ

  NS1: 1275   
حضرت سیدۂ کائنات جنتی عورتوں کی سردار

  NS1: 1274   
فرید عصر وحید دہر حضرت شاہ سعداللہ صاحب نقشبند دکن رحمۃ اللہ علیہ

  NS1: 1273   
ویلنٹائن ڈے بے حیائی پر مشتمل غیر اسلامی رسم۔مسلمان ایک بامقصد قوم،باطل رسوم وخرافات سے بالاتر ہوکرمقصدیت کی طرف آئیں انسانی کردار اورمذہبی اقدار کے منافی چیزوں سے گریز کرنے کی تلقین

  NS1: 1272   
حضرت پیر بخاری شاہ صاحبؒاتباع سنت کے عظیم پیکر

  NS1: 1271   
حضرت نظام الدین محبوب الہی رحمۃ اللہ علیہ کی ناقابل فراموش خدمات

  NS1: 1270   
ذات رسالت مآب صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم محبت،عظمت اور تابعداری

 
میل کریں    |    نقشبندی کیلنڈر    |    فوٹو گیلری    |    اپنے دوستوں کو بتائیں   |    رابطہ کریں
Copyright 2008 - Ziaislamic.com All Rights Reserved